Masjid ki Tameerat

اللہ عَزَّ وَجَلَّ کا گھر بنایئے

ترجمۂ کنز الایمان: اللہ کی مسجدیں وہی آباد کرتے ہیں جو اللہ اور قیامت پر ایمان لاتے اور نماز قائم رکھتے اور زکوٰۃ دیتے ہیں اور اللہ کے سوا کسی سے نہیں ڈرتے توقریب ہے کہ یہ لوگ ہدایت والوں میں ہوں
(پ ۱۰،التوبۃ:۱۸)

فرمان مصطفی صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ: جو اللہ عَزَّ وَجَلَّ کی خوشنودی چاہتے ہوئے مسجد بنائے گا اللہ عَزَّ وَجَلَّ اس کے لئے جنت میں ایک گھر بنائے گا ۔
(صحیح بخاری ، ، رقم ۴۵۰ ، ج ۱، ص ۱۷۱،بحوالہ جنت میں لے جانے والے اعمال ،ص۱۰۴ )

فرمان مصطفی صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ: حضرتِ سیدنا بشر بن حَیَّان رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ فرماتے ہیں ہم ایک مسجد بنارہے تھے کہ حضرتِ سیدنا واثلہ بن اسقع رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ ہمارے پاس تشریف لائے اور سلام کیا پھر فرمایا کہ میں نے سرور کونين صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کو فرماتے ہوئے سنا ہے کہ'' جو لوگوں کے نَماز پڑھنے کے لئے مسجد بنائے گا اللہ عَزَّ وَجَلَّ اس کے لئے جنت میں اس سے بہتر گھر بنائے گا۔''
(مسند احمد ، رقم ۱۶۰۰۵ ، ج۵ ،ص ۴۱۹، بحوالہ جنت میں لے جانے والے اعمال ،ص۱۰۴)

فرمان مصطفی صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ: حضرتِ سیدنا ابوہریرہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے كہ نور کے پیکر، تمام نبیوں کے سَرْوَر، دو جہاں کے تاجْوَر، سلطانِ بَحرو بَر صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے فرمایا'' جو حلال مال سے مسجد بنائے گا اللہ عَزَّ وَجَلَّ اس کے لئے جنت میں موتی اور یاقوت کا گھر بنائے گا۔''
(طبرانی اوسط ، رقم ۵۰۵۹، ج ۴ ،ص ۱۷، بحوالہ جنت میں لے جانے والے اعمال ،ص۱۰۴)

اَلْحَمْدُلِلّٰہِ عَزَّ وَجَلَّ!دعوتِ اسلامی کے شعبہ خُدّام المساجد کے تحت اس وقت ملک پاکستان میں 590مساجد زیرِ تعمیر ہیں اور 390ایسے خالی پلاٹ برائے مساجد موجود ہیں جہاں مسجدیں بنائی جائیں گی۔
آپ بھی اپنی قبر وآخرت کی بہتری، ثواب جاریہ کی تڑپ اور اپنے مرحومین کے ایصال ِثواب کےلئے اگر کوئی مسجد بنانا چاہتے ہیں توہمارے پاس ملک کے پانچوں صوبوں میں کچھ خالی پلاٹ وقف برائے مسجد موجود ہیں جہاں پر مختلف سائز اور مختلف قسم کے میٹریل سے مساجد بنائی جاتی ہیں مساجد کے سائز وغیرہ کی تفصیلات آپ ویب سائٹ پر بھی دیکھ سکتے ہیں۔۔
ہمارے ملک کے کچھ ایسے پسماندہ علاقے ہیں جہاں مسلمانوں کی آبادیوں میں غربت کے سبب مساجدکی بہت کمی ہیں اسی وجہ سے وہاں کے لوگوں میں دینی شعور بھی کم پایا جاتا ہے۔بالخصوص تھر پارکر، خیبر پختونخواہ، بلوچستان اور گلگلت کے علاقے جہاں وسائل کی کمی کےسبب مساجد بن نا سکیں۔آپ مختصر رقوم میں مساجد بنانے کےلئے ہمارے نمبر پر رابطہ فرمائیں ۔
اسی طرح دنیا بھر میں آدم شماری میں مسلسل اضافہ ہوتا جارہا ہے جوشہر آج سے 30 سے 35 سال پہلے چند کلو میٹر پرپھیلے ہوئے تھے وہ آج کئی کلومیٹر طول عرض میں پھیل چکے ہیں۔ ظاہر ہے جہاں آبادیوں میں اضافہ ہوگا وہاں مسلمانوں کے لئے مساجد بنانا بھی لازم ہوگا۔اب ایسی آبادیوں میں جوکہ نیو ٹاؤن ،نیو سوسائٹی پر مشتمل ہیں وہاں پر بھی اگر آپ کوئی زمین مسجد کےلئے خرید کر دینا چاہتے ہیں یا وقف کرنا چاہتے ہیں تو رابطہ فرمائیں۔
اسی طرح مساجد میں نمازیوں کےلئے پانی کی فراہمی بھی ایک بہت بڑا کار خیر ہے۔ اکثر جگہ نہری پانی کی رسائی ممکن نہیں ہوتی یا ہوتی بھی ہے اتنی مقدار میں پانی نہیں ملتا کہ نمازیوں کی طہارت کے لئے کفایت کرے ایسی صورت میں مساجد میں پانی کے کنویں ، بورنگ ، ہینڈ پمپ ، سمر پمپ جہاں لائٹ نہیں وہاں سولر سسٹم(شمی توانائی) پر بجلی اور پانی کا انتظام کرنے کےلئے بھی رقوم دے سکتے ہیں۔ اسی طرح کچھ لوگوں کی اپنی کچھ چیزوں کی فیکٹریاں ہوتی ہیں جہاں سامان، پنکھے ، بجلی کے تار، بجلی کا مکمل سامان، صفیں ،دربان، لکڑی، المونیم کے دروازے ، مساجد کی تعمیرات کے لئے ٹی آئرن ، گارڈر،سریہ ، سیمنٹ ، ریتی ، بجری ،اینٹیں ، سیمنٹ کے سیلپ ،گرڈر( یعنی پری کاسٹ)کا سامان بھی دینا چاہیں تو رابطہ فرمائیں۔

Typical Drawing For Masjid

Typical Plan
Front View
Section at A-A
Section at B-B
Typical Plan (Opt-2)
Front View (Opt-2)
Section at A-A (Opt-2)
Section at B-B (Opt-2)

Other Way To Donate

Title of Account: Dawat e Islami Khuddam ul Masajid

Account No: PK32DUIB0000000135392007

Dubai Islamic Bank: Al-Hilal Society Branch, Karachi

Phone Number: 03161121463